خواب دیکھیں مگر کھلی آنکھوں سے !وہ معزور شخص جونشتر کالونی کے اشارے پر تین پیوں والے موٹر سائیکل پر منی موبائل شاپ چلا رہا ہے

تحریر : اعجاز احمد آرائیں
آج کل کے نوجوان چند دنوں میں امیر ہونے کے خواب دیکھتے ہیں اور انھیں پورا کرنے کے لیے شارٹ کٹ کی تلاش میں لگ جاتے ہیں. کہ ہمیں کہیں سے ایسا طریقہ ملے کہ ہم دنوں میں آسمان کی بلندیوں کو چھو لیں. ایسا ہو کہ ہم آفس میں بِٹھے ہوے آڈر لگایں اور ہمارا کام ہونا شروع ہو جائے..
جن کامیاب کاروباری افراد کو دیکھ کر آپ بھی ایسا بننا چاہتے ہیں تو ان کی شاہنہ زندگی کی طرف نہ دیکھیں . بلکہ اس کی پیچھے کیا کہانی اور انھوں نے کن حالات میں اور کیسے کام کو سٹارٹ کیا –
میں آج ایسے فرد سے ملا ہوں جس کانام
محمدنزیر اور وہ معزور لاہور فیروزپور روڈ نشتر کالونی کے اشارے پر تین پیوں والے موٹر سائیکل پر منی موبائل شاپ چلا رہا ہے. جیسا کہ موبائل لوڈ .ای چالان. اور موبائل اسسریز وغیرہ .
اس پوچھنے پر اس نے بتایا کہ وہ پہلے ایک جوتوں والی فیکٹری میں کام کرتا تھا لیکن زیادہ صحت خراب ہونے کی وجہ سے وہ کام چھوڑنا پڑا اپنے .وہ کہتا ہے کہ میں خود تو کچھ بن نہ سکا لہزا اپنے بچوں کو تعلیم دلوا رہا ہوں اس کا بڑا بیٹا آٹھویں کلاس میں پڑھ رہا.
لہزا اپنی معزوری کو میں نے اپنے خواب میں آڑ نہیں بننے دیا اور یہ موبائل شاپ والا کام شروع کر دیا جس سے میرے گھر کا گزر بسر ہو رہا ہے. بابا جی(محمد نذیر) کا نمبر03214122027
ہم سب کے لیے اس میں ایک سبق ہے جیسا کہ محمد نذیر نے معزور ہوتے ہوئے.
اپنی معزوری کو عزر نہیں بنایا. اگر ان کے حالت پر نظر ڈالو تو اس طرح کے کئی لوگ آپ کو بھیک مانگتے ہوئے  دیکھائی دیں گے۔جن کی مدد کرنا ہم اپنا فریضہ سمجھتے ہیں لیکن محمد نذیر صاحب جسے لوگ جو خود رزق حلال کما کر اپنے آپ کو مشقت میں ڈال کر اپنا گزر بسر کر رہے ہیں ۔یہ ہماری اخلاقی اور مذہبی فریضہ میں ہے کہ صاحب استعاعت لوگ محمد نذیر جیسے لوگوں کی ضرور مدد کیا کرئیں
واقع ہی محمد نذیر داد کے مستحق ہیں.ان برے حالات  اور مہنگائی میں بھی ان کا  حوصلہ کتنا بلند ہے ارادے کتنے مضبوط ہیں.اور توکل اللہ پر ہے.
کامیابیملتی ہے  تب جب دل جمی اور لگن سے کا کیا جائے کوئی بھی کام چھوٹا یا بڑا نہیں ہوتا کسی بھی کام کو اپنی انا کا مسئلہ نہ بنایں
جو خواب دیکھیں اس کو حقیقت بنانے کے لیے اج سے ہی عملی کام شروع کر دیں.

اس کو چھوٹے لیول سے شروع کریں .
آہستہ آہستہ اس کو بڑے لیول تک لے کر جایں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button